پی ٹی آئی سے اتحاد میں وزیراعظم عمران خان کے کھانے کھانا شامل نہیں ہے، مونس الہٰی

پاکستان مسلم لیگ (ق) کے مرکزی رہنما چودھری مونس الٰہی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کردہ اپنے ایک پیغام میں کہا ہے کہ پی ٹی آئی سے اتحاد ووٹ کی حد تک ہے۔
وفاق اورپنجاب میں حکومت کی حلیف جماعت پاکستان مسلم لیگ ق نے وزیراعظم عمران خان کی جانب سے دیے گئے ظہرانے میں شرکت نہیں کی۔ پاکستان مسلم لیگ (ق) کے مرکزی رہنما چودھری مونس الٰہی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کردہ اپنے ایک پیغام میں کہا ہے کہ پی ٹی آئی سے اتحاد ووٹ کی حد تک ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ معاہدے میں وزیراعظم عمران خان کے کھانے کھانا شامل نہیں ہے۔ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے دیے گئے ظہرانے میں مسلم لیگ (ق) کا کوئی نمائندہ شریک نہیں ہوا۔ اس ضمن میں ق لیگ کا مؤقف ہے کہ گزشتہ دو سال کے دوران وزیراعظم کی جانب سے ان سے کسی بھی قسم کی کوئی مشاورت نہیں کی گئی۔ لیگی قیادت کی قیادت نے گندم کا سرکاری ریٹ دو ہزار روپے فی من مقرر کرنے کی درخواست کی تھی لیکن وہ منظور نہیں کی گئی۔ اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الٰہی کے صاحبزادے چودھری مونس الٰہی نے حکومتی پالیسیوں کو کسان کش قرار دیتے ہوئے تنقید کی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں